٦‏ ۰ -.ٗ َ 0م۸یھ

ہے

۴۱٢۲ ۱۷۰۲٢۲٢١ 80٥ئ‎ 011٦٤ ۲٢ ۸۱٢١٢۹٢۲ 1356 ۲

۸۱۱۱۱

خی ا را ارک ا تاب

ا ہے ٍ

عون

یکا

2

مہجم

پت دنا ان اش 2 سح جس ا شا مب 030-501

۴۱٢۲ ۱۷۷۰٢۲٢١ 80٥ئ‎ 011۱٦٤ ۲٢ ۸۱٢١۷۹٢۲ ما۹)3‎

اردو/ >-2- رم

صحخجات

2

- ۸500۱۲61 ۷۴

چملتقو یلین ناش تفو ظا ہیں

تین نی علوم التقرآن ۱ فی القرآن

عرل

اخ حھیلی صابولی

علوسش رآ نا بیان

لوس مخ رآ کنا بیان

ین لیر یٹ استاذ اتلم ”قشمد لی راد وئی مد لہ الحالی

300

ون6 2014ء طا لق شتبان ا مظم ۵ ۳٣۱۔‏ تج اجررضاخان

>/0 ہے

پا ر

مت اضلی حفرت در ر مارکیٹ ور

042-3 01

0٥ط:0300-8842542‎

نؤٹ:۔اا لکتا بکا پر وف در یڈنگ میتی النقدورلوشت لک یکئی ےا ہم بشربی تا مخت اک کوک ی ملع و رح نظ سےگزر تو ادار کشر ورمع ک می ناک کیا جاتے۔(اذارذ)

۰

۴۱٢۲ ۱۷۰٢۲٢١ 80٥ئ‎ 6011۱٦٤ ۲٢ ۸۱٢١٢۹٢ ۲٢356 ۲

٥و8‏ ۵/٠۱ء/و/‏ ۱۱۴8ء ۲ذ 3 یہ رآنایان _

۱ ۱ کون کی نر ازم ز 1 ض2

میرم ا زمصتف اضضل 0 علوم ال رن لف ن کا مدکی اہے؟

ریف مر ان یر

متصدنزو لم کن

روم شال

م‫ ۰ ٠‏ >:ٍ ۱ برقت اساب مز ول کے و ام

|| آیاتاوصاف

نواٹ ان کا ا ستماں

عم ٰ 7

۴ 7۰۳ ٰ ناکارلاش٭رواٹت

٠ ۱‏ گآ ےپ ۷ اف ٭ صی . نز وی کے اعضما ر ےب اور ماسعک بی ا نات ٣ر‏ مہ گے مکی وضاحنت 36

۴۱٢۲ ۱۷۰٢۲٢١ 80٥ئ‎ 011٦٤ ۲٢ ۸۱٢١۷۹٢۲ 1۲36 ۲

۸۱۱۱۱۷۷

ت" - ك3 ایت ہے

کل چھھ یحکرت بی اکم ہام نےق ہن پا کک رح ۱8۵

ں١‏ ں0 ١۵‏ ضف

: : عم

نول ھ7ا نل رم

ترآں/غ انل ئا؟ ۳ 46| ماس تب می دتی سے ہے؟ 65

دالا ا کی وچ یل رآ نکویش کنا 68 ےہ

53 | متا برا کاحفظاش آنن

سیبنوں میں ش رآ ن یکاہ ہونا

بہ| یہ|إ یہ]|إ یہ؛إ یہ دہ| نم دٍد۸م,. نضىں؛۔ ہج

"ہے 56 ٰ بغار یکی ردایعت

7 تح ق رن سے تل سوالات 2

۰ ہی ت ےت ٣.‏ پٌح' او“ ٦‏ .ّ80 ۱ --

۴۱٢۲ ۱۷۰٢۲٢١ 80٥ئ‎ 011۱٦٤ ۲٢ ۸۱٢١۷۹٢۲ 6ٌا۲]13>‎

۸6071٦ لوم رآن‌گکایان-‎ 5 ٰ

75 ا غاپ فی ھا کرام ( جو ) 93

سوا ر3 لاحظلہ 93 عب __.. ]اف ۱

رواجت پالمانو رکز وری کے اسباب

مزال الع فان ٹیل زررقا ی کی رائۓ 95

ہاب

مخ ش رآ نکاع وططر اہ

ول اکم لہ کے مانے می ئ رن اک کیک مصحف ٹس ش عکوں کی ںہوا؟

ضر ت مان ڈو ک نع رآ ن کا سی بکیا تھا ؟ محضرت ابوبگرصد لق او تحضر تعن نشی ٹین کی یع بی ٠ری‏ لات 1 پہلاطقہ

رت ماد ہکن بتر رم الند 87 رت عطا ومن ایا باب رح الند

ضرع بن خاش ٹین ک ےآ اوکرددغاا منرت گرم ہیی

-٦‏ کے کے جح زج تر

کت 0|0 جم

لت ر١‏ تں

کے ہے کت نپ غٌ

نے ت0( دن0

۴۱٢۲ ۱۷۷۰٢۲٢١ 80٥ئ‎ 011۱٦٤ ۲٢ ۸۱٢١٢۹٢۲ ۲٢356 ۲

۸۱۱٣

انت تح رک نک حب فی ر الد علیہ حضرت اب وا لحالی ار یا یا یٹ

سے رت 87 8 ا ہام لعراتی_ اج یم 19 نیت سن بھی رض اڈعلیے ٠<‏ ےے

معضرتسسروں مین اجدوں ریا تعفر تمادہ من دعامہ جوٹڑ حضرت عوطا خر اسا لی رج الہ ضر تعممن الی ڈو 48 پت رہپ | 115 جا روج اس ۵و ہس

121 جا ۷ر

۰ ۱ 4419 ۱ مرن اک کے وھ ہاغاز

۱429 عبادات جس وسعمت

ی9 تو ںی نجرد ینا

۴۱٢۲ ۱۷۷۲۰٢۲٢١ 80٥ئ‎ 6011٦٤ ۲٢ ۸۱٢١٢۹٢۲ 0ٌا3]‎ ٢۲

۸۱۱۱۱۷۷

7 علو مق رآ نکابیان

59آ یراک یرد آ7

۰ہ ےہ

نے سور عادیات کے متارض کا 83

84+ طض یا صلی

ہے |- ش٣‏ کہ دن مٌن,۔ دِ تپ دن إ (ٌ9و9؛ ‏ وی0

مہ ]إن طقلسےم م0 ہو )٥(‏ ئ0

مم سر وت

عجے! ٴ جم ۵0ا, نیا ٥3‏ ںی

دن0

0 ہے‎ ۱

کے زمغ ے

کے ك نہ

ٴ کل حا - رر ۵ 3 ےچ

ہے کے ).۔- ۲ ت 5

128 یں میں ت رآ نکی ما خر وہہا-سمفیہارراے امت 18

فرہلجھوے ے

نا ض۵١‏ , بںب ٢٤۵‏ حہ

ہ ف0 نہ

۴۱٢۲ ۱۷۰۲٢١ 80٥ئ‎ 011۱٦٤ ۲٢ ۸۱٢١٢٢۹٢ |مٌا۲]3>‎

۸۱۱۱ ٥۷

8 ملوسش رآ نککابیاان

۸م,. نہ کے إ ساےہ جو

گی وت کا جو اب 215 .ما مخز ابی تلق کاقول 216

نہ ھی دن0

210 ہواااٹ 218 ا آ شر ور گے و پبلانمہب ا 210 مسہرں م تی را ی اورخراب انغیر ۱

ہ زگ

10ج مفیرافار یکس

وع دک کال ...0 ٭ے تھے شک ہار ےش امرس گرا آ20 :0٥۷و‏ مد 220 وش ]۴۰٢٤.۱.‏ ہو مار اض قل

۸م؛. نہ کے زگ

2 زرم ل6 کول سا ٣1م‏ رز ای بت اویل 227

۴۱٢۲ ۱۷۰۲٢١ 80٥ئ‎ 011۱٦٤ ۲٢ ۸۱٢١٢٢٢۹٢ مٌاج)]‎ ۲

۸۱۱۱۷

یح 5

9 لوس رآ نکابیان

امدا شیک ای 228

ےکا لاہ 29

۰ 1۔. 1 ۱ فراص ایر

1ود یرلیگ 240

ان گرا ۲:.- یت ۳-

چس _ 3

ہے 2 دو| آف٣‏ 24

٠ ین کے ہ٭‎ ٠ خی ربا لن گے چند رہ ونے‎

بی 5 ۳ك ۔-۔

سوالاات مور تع بکاتحاف خاش تی تین قایر ٰ نف پا فور ۓتعحل کت ب کا توارف

۱ تقسی ران جر یر

ا لفی رٹ یضحوصیات

وا ٥(‏ 0 کے ٢‏ کب

نا 0(" رگج

۲۱٢۲ ۱۷۷۰٢۷٢١ 80٥ئ‎ 011٦٤ ۲٢ ۸۱٢١٢۹٢۲ مٌا۹])]3‎ ۲

۸۱۱۱٣

10 لوس رآ نکابیاان

وب

رناجا ترے؟

یا ککا ہات7 روف 275

نو بل

برنول اورشجورٹ رآ ۱ ک

ماتہمراتوں پرنزول ق رآ نکی کت تر تو ں کی نر وی نک ٰ عحق جزری نف سما ت7وف یےٴ نول رآ نکاستی :

حد یٹ ٹیل وارد ات فک یخس ریس علا کا اختااف 265

سے

۱ ]الات‎ 268 ]۰.........>2 ١

کیا آ جمصا ہف می امرف سبعہ جدہیں؟ آ ا ضکل الناظط کےممالی 23. نل رہب طبر برمتا قش

۴۱٢۲ ۱۷۲۰٢۲٢١ 80٥ئ‎ 011۱٦٤ ۲٢ ۸۱٢١٢۹٢۲ مٌا۹])3‎ ۲

۸۱۱۱۱۷۷

11 و مقرآ نکابیان

وط کرک سے بی ن سے ۲ز رر مم زان ےم بل بے م7 پک * مت او کیا یکر چم الام و جاے رن اک نو انسا نکی طرف الشدتعا ی۶ وق ل کا آخرک یکلام سے ۔ مس کس ایا رشدوہدایت نے می کوئی کیک وش کیل ا کے ے ہبرجت ین کے فضانل ای جلہ سل مان ایس کے تز و لیک مق تحبقی اس میں خور ولک رکرنا ےس کہ ہا نوخ اتالنىء براس وعدہ اضر یک ذا تک رز تک لگا اظماز خوب ریشن اورواش ہوجاۓ۔ جاے اسلافتو ینا می ور گر ٰ مرج تھے چس کاخ بی ق رن ہے تحلق درجنو ں٣‏ تک کی شی جلدون بر ہار ۓکھ ینز اشہمیں موجودہونا سے ناو کے عام اسراو کا دو حاض یس ایی لی روعا ی٣‏ راب سے واۓ جت ص2 اوقات وابام ےھ رم نع ہو چڑے۔ اکر سلسلہجاری ر ہاتو بقول شا۶: ہا مو تھے ...و رق ماق نگ دے مساانو! مماریا داحتان بھی وی دا۔تالوں می ادا ا ںکی بب تکی وج ما ت ںآ شی اک وم ای تاب کان پا عم بت سےا خزانو ںکا لم نہہونابھی سے ۔ک اگ انیس ان لیا چا ۓےتوض رود بالض رو رم اس کے مطال کی رف راغخب ہوں ۔عشال کےطور پر : نا لکائجات کے ار ےکن رازوں ے پردواٹھاتا ہے انا تکی پیئش تخاق اضساحیت ان مکی ہر چیڑکا جوڈاجوڈ نایا جاناء ہوا5ں کےزر یی درضت ںکی چون رکا رکی:آ یجن او رین کے بارے میق رن می سکما یھ بیان ہوا نیز دم رعلوم ونس اورا کا عربی نز پان یں نازل ہونا ہق رآ نم سط رح مجح ہوا ؟ نشور تاسی راو ا نکیا لو ب اورعطبقاتہ مس رین کے بارے میں معلوبات ءا سکاسات تق رآتوں یں بڑھاجانااورسات رامک تارف نیز ہمارے با لکو نیج رات گی جالی ے۔وغیردوفیرہ۔ ا ا مضاشی نکا احابز نظ راب پان وخ کرت سے مقینا یکنا ب لف شعہ ہا زندگی کے پرفرد کے لئے یلما مغیرے ۴ لمدارس پاکمتانع نے الک کی اے کےنصاب میں ام لکیاتوظلرا ہک یہہولت کے لے ا کو لی سے اروزان شش نکاس ایالد ہف استاذ المتادما ءضحضرت علا میم وا ناصشقیشحرصمد لٹ برااروگی صاحب من لہ العا لی کے اپ انب ول اتال ی محنت کے سا تح اس کا مکوسراضجامدیا۔ یس ام کرتا ہو ںک ہق مین ء اداد کی دی یو 20000000 ۰

بھی تر خیب دس کے۔ ایز ول ا سکتاب کے نوف دو برکات سے مصنف :مب ر ڈسیسیب ناس رایا انی کنیٹ مابفرمائے۔ آمین۔ بجاەالنبی الامینں مین ا وم امک والتاراء ااونظائثر ا گل عظاری ×۳ خعران ا معن ے ٣‏ ٣۱ھ‏ بسطا لن 21 جن2016

: ٭٭ے_ن60نےنے6ةےےٰح ٤‌٤ھ._._‏ ا

۴۱٢۲ ۱۷۰٢۲٢١ 80٥ئ‎ 011٦٤ ۲٢ ۸۱٢١۷۹٢۲ مٌا۹)3‎

۸۱۱۱۱۷۷

ْ ْ 12 لوم رآ نککابیان ۱تت صحجصحصصصصصأ-سسصوسسسسسعدممسسسوسوسمسصوُصٌووصمحصومممسسمسسسسسسسسسسسسسوممسسسصعوسوصس-ص-ص-سسجےک۹فضسصح<چکطکطبست۱۶طڑ]سسوصوسس-ےھیکىکےی<< ْ مم قد مہ زم رم

رآن دہ سا کب میں ے۔ ب سےا ت کی کاب ے جواپے نزول سے نےکر غقیام تک کک نے وا یتلوں کے لے داع دکنماب را نما سے ال لے ر1 انا رات جا ا آسا ی کاب سے اور ى یتما علوم نیل ہیں نکی آنئ یا ضا کہا کاے: عمیع العلم ئ القرآن لکنی -- تقاصر عدہة افھام ۔الرجال شرکن ماک متا لو سوجود ین وو ں کی میں اسے وین سے قاص ہیں ۔ زیظرتاب؟ ںاتے کے م ولف" بی صا و“ ہیں1 علوم پرایک جاٹ ت ماب سے مس میس اعم زظ ھآآنء ترحب ون وین رن اشن کے اعتزاضات کے جوابا تأفسی ری خقلف اقسا خرضی ہق لی عو تما یم ضروری عنوان تل لاب تصرف اع ول ویر باذو مسلمان کے لہا یت شال کاب ے۔ تیعم الم ارس ١ن‏ سنت پاکتاان نے ھا راد سای( )اب می شالکرکے ایک یت ارہ قرم اٹھایا ے۔ بے بات چہاں بجاو حامجی تک لے ہن نے ےو ہاں ا کو یکنا تد رے شک ل بھی ہے اس لے اس کے اددوت ج کی رود سو لک کئ_ رائم نے ججہاں ال سکاب محاور ون رج یکم وا ںپنخ مشکل الفاظط کے ما ی الک ےکی دے دچيے !یں جیا دوس رے تر ج میس نیںکیس کے ”مکتتہ اعلی حضرت“ کومیروملت امام ام رضا فنانضل بر یلوکی نیننی کا روعالی یل حاصصل ےج سک ہیاد بر طرائقی اور اشائق میدران ٹل بکتبددن بدن 7 کرد ہاے۔ علا موا الو نظ لٹ را ۰ل تارریز بد ہجوب سے خوب ملاس ار یں می وجردے ےک تما بت 7 کا ا اشا عح تک ران کے رجاہے۔ رائم ان کا نون ے ےکہانہوں نے رائم کی ا کاو لکوڑمی دنا جک ٹا نے کا یڑ ااتھایا اورخلصورت طبامعت کے سا تجھ ذوئی لیف کا حفہ می یکا اتا لی سے و: ا ےک وہ رصع ورم ذات :” کتہ ای حضرت“ کودن ڈوٹی رات ھچکنی تر تی عطا فررماۓ ۔اورال الاب مسنتطا بکوعا وم آم ےآ ایانم ذرلجہ ینا کر ملین :ملین اور عارتۃ می نکواس ے اسنتڈادہ کیو فق عطافرماے۔ آمین۔ بنا نبيە الکریم عليه التخیته والتسلیم ترصن یش جار وئی سسعی دی از ہرکی خماوم ان بیٹ جا مع ہاو پیر رع رکز معارف اولیاء در ار عالیتضرتداتا رع بش می لا ہور 21.14380 خ ری2016

جھم ٠‏ ٰحخ ٤ًھ._‏ ا

۲۱٢۲ ۱۷۷۰٢۲٢١ 80٥ئ‎ 011۱۱٦٤ ۲٢ ۸۱٢١٢۹٢۲ ۲356 ۲

۸۱۱۱٦3۷۷

13 لوس ش رآ نککابیان

متَدنہ از مصىف

تا مت ریییں ارڈ تی کے لئ لے ہیں جوتام جباندر کا رب (ما کے اور

رحس تکا مل ہاو رسلا مم اس ذات ( حر تر سے ۸( بر وشن اوقیام ا اون گے کے

۱ رحمت بن اک کیا کیا ے اور کی آل مسا کرام او دق مت کک گی کے ساٹ ھا نکی

اتا کر نے والوں ری (رمت وسلام ):٭۔

.ند مادائئیں ہیں جو میں ے کلیة الشر عيه والدر اسأات الاسلامیء " مہ رک لم ٤‏ سے لی ہیں م۷ ای دی معیا رک 8 ہواور کے ا ۓ موں۔ نیعلا کے ذا مد ےکی می بھی نلم میں بت ر ھت ہیں اوران( 20 وی رع یش درکھئے وانے ہیں اور یش نے خنیا لکیالکہ اس ےکتاٰشل میں می گروں ما را کا اد و عام ہواو عم بے ۔

اٹ دتتا لی بی ےسا لگ۷ر ہو کو ا۔ س ںا اق گرم ذات کے لے گمردرے اور قیامت کے دن“ ش اس کےذر بیجع عطاڈ وہ

ُ۔

مم لا یَفَعُ مال وا بَنُو نَ اِلّامَنْ أَق ات بقلب

ںرٍ 1

پا یی ۱

رم 2

یں رن مال اور ۓےۓ فاند بیس در کے روم چو ہاامتع دل ئ۶ سا تجھ انتا لی کے باں عاض ہو جا لۓ - اورائن بی ںکاپی ے اوروہ پہت ر7 نی کارساز ےے۔

یی ااصائو ےک اس در ایت اج ودرا ات اڑا عہاا ہے ۴۰ مایفحرمہ

رجب ا جب1390 2

ہم نے ےھ ۔۔۔ ہہ تےهح ‏ ہے ہے ہ ہہ ہ ہہ ھًے ۔ ہے ہے ہو ہے صصح هہہے ہے ہے اس سسجت چو سے ٭ے_,-: أْ

۴۱٢۲ ۱۷۰٢۲٢١ 8ہ0٥ئ‎ 6011٦٤ ۲٢ ۸۱٢١٢۹٢۲ 136 ۲

۸۱۱۱۱٦

وم لقن

7

لی رہم سے اس بات کا نا ضاکرتا ےکپ لو رن کے بارے می اختسالر کے ساتھ جان لی ۔ اود پھم اس با تکو جیا می سکہاا سکاب یر کےموائ نکیا ے؟ اور بی( سب پکجھ )فو قے یی ز کن دای جوا وع لو ٰ ویش نما ںپھوں کے ور اج ۷ وکیا تو۳ سناب زی گی خدمت یل بڑڑے بڑے اس مہ کےذر یج او یما الم رت عااء کے ذر می ےک یمیس جنہوں نے اس عمزت دای میرا ِ ت او ینوخ ڈ ان ےکی تفاخظت میل ا کی زن گرا ں ص رذ فگ۷ردں۔ اور سس نز ول ش رن ( کے ز مان ) سے لےکرآ نا کک جادکی ے پُچ روہ اد تھالی کے ہاں جلے گے اورانہوں نے ہارے لے ایا مھتیھیس رما کے وڑاکہز مافوں کےگمز ر نے کے باوجودا کا جار بای (فیضان مض نی ہوا اور ہبی اس کےموئی مت ہوتے ہیں اورا تھا کہ کے باوجود جو اود ید مانے می کی اگف یق رآن یاک الیک بڑاسحندر ےج سک گہرائی می نو طہزن ہو نکی ( ج بھی ) ضرورت ےٹاک اس سے( > می )مو نی اور جواہ رکا نے حا یا سے پیا لغاء نما ءاورشترا ش رآ ن یا ککاوصحف با نر گے ہیں انہوں نے ا ک ےمان او رلشا ال بیان کین رسول اکر حضرت ہج نکبدالق دآپ پرالڈ رتا ٰ کیارعت ہواورس لام ہوش سمخ اورء ول ےت یب یا لن شر مایا ام اس7 نی کچ کت جب آب نے رمانا! کتاب الله فيه نباء من قبلکم وخبرمابعں کم وحکم بینکمھو الفصل لیس بالھزل من تر کە من جبار قصمه الله ومن ابتغی الھدی ثی غیرہ اضله الله هو جبل الله البتین وھو الل کر الحکیم وھو الصراط المستقیم وھو الذ؟ لا تریخ بھ الا ھواء ولا تلبس بەه الالسنة ولایشبع مه العلہاء ولا یلو ق علی کثرۃ الرد ولا تحقضی جائبه وھو ال لم تذحه ال اذ معته حق قالوا نا کيختا رانا تب یق ِل الوخْيِفَامقا یه

وَلن ذَضركَپربْتًا أَحداً ' ۱ من قال بە صدق ومن عّل به اجر ومن حکم بە عدل ومن دعا اليه ہُدی ای

سورۃ نآ یت 1ء2

جھ ._.۔. ‏ ٰحخ ٤ًھ._._‏ 1 ہے

۴۱٢۲ ۱۷۰٢۲٢١ 80٥ئ‎ 011٦٤ ۲٢ ۸۱٢١۷۹٢۲ آمٌاج۹)3‎ ) ۲

۸۱۱۱۱۷۷

15 لوق رآ نک بیاان

صراط مستقیم'

(مہ اد کاب ہے جس مم سے پیل ارچ لوکو ںک اخ یں ہیں او رخمہارے درممان فیملہ سے الیمافیملہ ج برا یس جس ن گج رکرتے ہو اس یوڑ دیا الد ا ےت ڑ د ےگا اور جواس کے خی ر یں جداحیت جا ںکررے للددتھالی ا ےگمرا ہر ےگا رمعخبو ط ری ہے بیحکمت دالا ذکر ہے اود می سیدرحاراست سے موہ( کاب )ےج سکی وج ے جوا ہشا کت نہیں اورشبی زہاْوںلء رعلطا مرلط ہوا سے اس سے اما ہی رکیں ہو تے اور ای کے بار بار بڑ ھن سب پبراناکییں ہوتااس کے گیا ات تم کیل ہونے اور بد وکناب ہ ےک جب جنوں ے اسے سا كووہ ىہ بات کے سے رک نر ےک

إقَاسَيِغْتا ة بڑا رانا ٥‏ زی ِلَ الزُخْيِفَامنًابووَلی تفر ك روٹتا (بے کیک ہم نے یب ت رآ سناجو دی تکی طرف نے جا ہے یں ہم ایل پر لے رم اپ

رب کےہاتم و یکوش ری نی ہرایس کے )

( مور لا نے فر مایا جس نے ال کو بیا نکیا اس نے ب کہا اورٹس نے اس بن لکیا اسے اہجرد یا گیا ور نے ال

کےذر یی فیص کیا اس نے عد لکیااوورشنس نے ا لک طرف وت دی اے سید ھھے رات کی راہنمائی حاصصل ہوگی۔

لو قر] ان کا مقص کیا ہے؟

علومق ران سے و وی ں”نقصود ہیں جوا دائ ی کاب سے لق تی ہیں یت رآن بی نزولہ ا ںکوش کنا ءا کی ترتیب ہت و ینغ ءاسباب نزو کی محرفت گی اور دی سورتو کی پچان: ناخ اورمضسوخ کی محرفت بحم مشاہ( کی بچچان )اور ا کے علادوتددابحاث یں جو رآ نظیم ےق رصتی ہیں باایس سے تل ہیں۔

ال در کی خغس ادش عم وجل کےکلاھمکورسول اکرم بلق کیا احاد بیث مبار گی ری یس مھا سے جو اس( ش رن اک )کی وضا< تت اور ان یں ۔ ۱

ای رب جو بٹھوسحا ہکرام اورت نین ےآ بیات تق رآ یک اتی میں نتقولے۔ ٰ

اس کے عڑا و راف ریس مفص رین کےطر یق اور اسلو بک بچجیان حاص لک نا سے اوران میس یوضر بی ن کا ذکرخمام رین کے انیو اورشرا ہیا کی پان عاص٣‏ لک ناے نیز ا ںعکہکی با یک باتوں( کک پٹچتاے ) ٰ

جا التر مر فضانل القرآںجطر2 ص583

۸ ص9٠‏ بت: ۹1ء2

صہح

>>×يستشتَ×حہ..._

مجممے-ن60نةن6ةےٰحخ ٤ًھ._._‏ ا -٭-ح

۴۱٢۲ ۱۷۷۲۰٢۲٢١ 80٥ئ‎ 011۱٦٤ ۲٢ ۸۱٢١٢۹٢۲ >]3ٌ56 ۲

۸۱۱۱۱٦

16 خلومق رآانکابیان

سس٤مٔكسمسکٰى٘پسسٹہ۲ہپہپٛموىک۲یسہسی٦وٰ]کمسسَْٰس]م]مسسپپجمجں‌ںژٛسژمٔسموڈٗممپ‌]گسیسمجم٘سیڈسٔمژمسمکژسپپجمم‌‌ژأچسجمڈ‌ژژسییپسہجچےٗتےید<تے--ٔیے‏ تحرف راکنا ید ف ٹخ اکن در قرآن پا کک یروف شر کیاکئیے: ۱ مو کَلَاه الو المُعُجر ْمْترّل لی حَاتم الاتْبيَاءِ وَالمُرَسِلِاْن بوَاِطة الامِین جبریل عليه السلام اَلمَکُُوْبُ فی العضاعفِ المنفُوْل الما الکواثر الُْكکَمن بِجلاَوَتہ ابو ِسُوْرَة الفَاتَة البُکُْکم بَسُوْرۃالتاں 9و( رن مجیر) الہ تا یکامجز(قلو ںکو جات کر نے والا )کلام ہے جوقمام امیا کرام او رم رین عنظام مہم السلام کے تخریی نی سیت پرامانت دار(ف رش )جج ریکل لا کے وا سٹے سے نا نز لکیا کال کلامم ) مض ف ہیں تک اممیاج ہماری طط رفتوا تر کےس رات ٹفل بہواال کی حلاوت کے ذر یت عباد تکی ای ہے۔ ال کا آ از سور ق فا تمہ

بل

او راخ سور النا لپ کر ہے ا ںنحریف برع کرام اور اص وی نمض ہیں_

متصرنرول ترآن'

افدتعالی نے اس ان اکوناز لکیا حا کہامت کے لے رستورحیات اورجل وی کے لے ہدایت ہہو نیز رسول ارم می مکی صداوت پردل اور پکی خدت ورساات پپرددکن ب ہا ان (دیل ) ہو جاۓ یز قیا مت کک کے لے اعم ہو نے والی جت وہ مکوابی دی بی سکم ہکا ب7 لمت وا ی نر فکی فی ذا تکرف سے اتاد کی بکلہ دای جھزہ ہنس نے ہرز مانے کےا وگوں اورک وہہو ںلؤ 3 گياشقا خی (غا۶۶ کو ج زا تیج رڈ ۓکمراس نےکہا:

جاء النبیوں بالایات فانصرمت وجٹتنا ٰ بکعاب غیر منصرم آیاته ْ یلما طال الیدںی جللا. یزینپن جچال العتق والقدیم

ایا ءکرا مججزات نےکر جو(ان کے جانے سے ) لے گے اورآپ ہعاادے پا د تاب لےرنش ریف لاۓ جو لے وا ی میں جوں جوں ز ماتیگز رتا ے ا سک یآ یات جد یدہو لی جا لی ہیں اس کےقدری ون ےکا مال ات ) ۱ آ بات )کوزینت 7 نع٠‏ یاڑے۔

مملا )۶< فکیلں مع ےاور رف( یم پروں ارت یائ یں ال کے ژں۔ ارگ

چھ _ وہس رے٭ 1 ٰحُ

۴۱٢۲ ۱۷۷۲۰۲٢١ 80٥ئ‎ 011۱٦٤ ۲٢ ۸۱٢١٢۹٢۲ مٌا۹])3‎

۸۱۱۱۱۷۷

17 لوط رآ ن کا بیاان

قرکن یاک کے فنال

شون اک قرآن ماک آوداس کے علوم کے خضائل تلق نے شا رروایا تآ لی ہیں النا یں ےت سکین او ھا ن ےکی فضلت ے نتحلق ہیں پچچرروا ات ق )2 اوت زتیل ے“ تحلق ہکن ض کال اس کےحفظ اور بار ار ی بڑھن ےے۔

ضسر انی کاب میں متعررآ یات | بی ہیں جوم ومنو ںکواس ہی ور ولگ رکر نے اس کےا جیا حاورا کی معلاوت کے وش تکگور سے سن اورنا مشش رن لے ملق ہیں بن سآ یا تک بیہاوراحاد بیث شر لیف فک کر تے بیمیا۔

4. إِن الَلْثْ لو يََابَ ا تو وَأَقَامُوا الضَّلَاةٌ وَأَنْفَقُوا جا رَرَکُتَاكُۂ یڑا وَعَلَايِمَةيَرَجُوتَ َارَڈُلی ٹور ؛ بے شیک وولوک جو اید کاب پنڑ حت ا و ماق کرتے یا ورجمارےہ ئے ہھدئے سے ہما کی راہ یل خر کرت ہیں اوشیر ہاور ظا ہرد دای حبارت کےا میٹروار ہیں یس می ساٹ وَإِذَاقْر ٤‏ الْكْرَآنْ فَاسْتَمعُوالهُ زی اا جو حون ي سب ان یڑھاجاۓ/ کان لاکرسنواور چپ رہو_ ْ لا تیروت الُْزآق ا عَل قب أَقَالھاء رح جا اض سے وں بقل کریں۔ اعادایث مارکہ ى یکر فتت نے فرمیا: 1 خیرکمر من تعلم القرآن وعلّہه ٴ ق یش سے؟بت ننس ددے جوق رن یا ک سامتا ا درا ےکا جا ہے۔ و رسول ا ت لیا نے مرا یا: الباھر بالقرآن مع السفرۃ الکرام البررۃ والڈی یقرء القرآن ویتتعتع فیه

سو رب فاط رآ ت29 را۶ اکا ت 204 سور تج بت 24

سے تا ار یب2 75627

-٭-ح

۴۱٢۲ ۱۷۷۰٢۲٢١ 80٥ئ‎ 011٦٤ ۲٢ ۸۱٢١٢۹٢۲ ۲356 ۲

۸۱۱۱۱۷۷

۱ 18 عليەشاق لەاجران 2 آسي ے ایا: اشراف امتی حملة القرآن ۱ یی امت کے رز لوک وہ یں جوق رآ ن اک کے عائل ہیں۔ 4 کآ یف ےہ ایا اقرءوا القرآن فأنەیأتی یوم القیامة شفیعا لا صحابه ۲ ش رآن یڑ عو ہقیامت کے دن ش کن غ( یڑ ھنے 6 والو لکی سغا در کر ےگا۔ 5 مکل الو الذی بقرء القرآن کمٹل الاترجة ریجھا طیب وطعبھا طیب ٠‏ جوم ن‌ق رہن پاک بڑحتا اہ ںکیشل تین (لیموں )کی رح ہے ٘ سک خوشبویھی انی ہے اور ذ ای

ْ گمدودوتے۔

لوف رآ نکابیان

6 سس نے الحادظمایا: ان هذا القرآن مادبة الله فتعلموا من مادیةما استطعم ٭ رق رن الظرکادسنڑخواان سے ہیں ال کے وسترخوان سے شس قدد جا ہو یھو ۷ قرع حا لکرنے والے کے نآ داب ۱ جو لوم ق رآن پپڑہتا ہے اس کے لے مناسب ےک ہہ و ٥آ‏ دا بت راع سےموصوف ہہ واس کے بیا نکردہ الا یکو ابناے او رحوا حم سےا کی خرن ادا یک رضااورآ حم تکا ہودنا کاوہ مال ومتاع ضہہوینزدہاس بی دئۓ گے احکام پل لکرے اک ہقیاصت کے ون می لق رن پگ )اس کان یٹ یل بن ۔ کہ حد یش شرف می ے: القرآن جة لك او علیيك'

مار ااساق 84 01 بنطا کل ۱ 792 0 | جا من رذ ْ مشل :لے ٥‏ ص184( کنا ب فضال القرآن )

جس ۶

موا لصا" ص484( تاب فضال القرآن )

٦

تا بنارل

' لف شی جزاول

-٭-ح

۴۱٢۲ ۱۷۲۰٢۲٢۰ 80٥ئ‎ 011۱۱٦٤ ۲٢ ۸۱٢١۷۹٢۲ ۹۲356 ۲

0:. آ۹۵۳ ۸۲5۲۱۱

19 علوسٹ رآ نکابیاان

رن تیر ےکی شی ما تیرےخلاف ججت ہہوگا۔ تن ابع تین کہا ٛس ن ےق ران باک نہ پنڑھااا نے اسےیوڈڑد با جم ن ےق رآلن پنڑھااوراس کے ممعالی می ور نما ا مسا نے گی اس ےم وڑد ما اور نے سے پیڑھااورخحور ولرک یکیالنکن اس یی موجودازکام پیل نکیا اس نے بھی سے

چھوڑرما_

امن تی نے ا( رہب بی تک طرف اشارہکیا ہے ادرسما دخداو نکیا ے :

َال ال؟ٗشول تَا رٹ ان قَوْؿن|ا تكَدُوا هَذَا اق ان مَهْچُور ١‏ صلی نے رخ کی آے مر ےرب می رکا م نے اقآ نکیچھیڑنے کےا یھبا لد ۱

خرن اک کے اسماے مارک ش من ماک کے متمدونام م| یں اود وقمام ال کا شان اورمتقام وم جک بلندکی پر ولا تم تے ہیں ۔ یھر کیٹ رن ا ک تما مآسا ‏ یککنب سے مطانقاز یادوشرف والا ے_ اں ےنا ء”قرآن, فرقان, تنزیل.ذ کر. الکتاب “یر ہیں ۔ سط رع ادتقا لی نے ا سکی متحددائی صفات بیا نکیا یی الع شش سے چند اتی _ بیلادرےءہدرا عت ےر مت ےش نما ہے وط ہے 1 مر ز(ع تدالا اورخالب )سے ما ركکے ے لیر ہے اورنڈ ہے۔ ای کے علاد ہکا وصاف یں جوا تا بکیعمت اود یرگ پروال۔ ت کرت ہیں۔ ٰ اٹ

۱ ٹ رتفیققت ال ںجنوان کھت ان اس کے تو راز کر کے ینک یک کن سو ئن نہیں رہطا ن۔ گن اد خ مرن نے کے باارے می کیا بات ڈیں ضنکن میس سے ایک مبیدے : مہ زت دا لے یش رآ نکی ُم۔ پوسرت

قٌَمَنَا الْقْزَآتَ ینْیی ایر

سور الف تا نا مت ہ30 ۰ سور ں1 مت 1 . سور الا اءآ تک مم 9

۴۱٢۲ ۱۷۷۰٢۲٢١ 80٥ئ‎ 0116۱1 ۲٢ ۸۱٢١۷۹٢۲ 0ا۲3‎

٦٦_‏ ٴ ئ۱ 0مھ

20 لوہ رآ نکابیان

بے شیک پیش رآآلن دہ راہ دکھا ا ہے جو سب سے سی ے۔_

بپ۔ ال( تاب لافرقان “کے پارے شی ارشارخداوندی ہے: تَمَارَكَ الَذِ تل الْفُزِكَانَ عَػىءَ عَبْيِِلِيِکتَلِلْعَالہژی کزئرا؛

ڑکیا کت دالا ہے ونس نے ااراش ران این ہندہ پرجسمارے چچہانو ںکوڈرسنا نے والا ے_

و _ ت۶ آن اک جا تخزیل “اس ارشادخداوندی ش ۓے-_ َإنَه لویل رٹ الَْالَہثی کل یو الژُوخ الكَِین'

اد بک یق رن رب العامینکاتاراہواے۔اسےدو لان نےکزا تار

ٹرآن اک ٤ع‏ 12 کے پارے مار شاداھ ے: لان تَولَا ال تر ولا لكَاؤوت "

وگ جم نے اتاراا کٹ نکواوربھ خوداس کاپان ہیں -

خرن ا کت تاب “یکر گیا تھے اس ارشادخداوندیی ٹیس ذک کیا گیا حمٌوالِتاب الَيِييِلَرَلکَاهليلَةِهمَا کو ٗ۲

ت مک ہے ان رشن ا بکیا ب ےگ ہم نے اسے برک ت والی رات ئل اجارا۔

مان اک کے اوصاف کے بارے میں متحددآ یا تآکی ہیں اورقر نیا کک بہ تک موی ہیں جوا سکاب کے خوش کن وصف سے نا ہیں جکاب ۶ز زت دا لے رب نے اتا رگا ہت اک ےتا بآ خر نی سی کا دای ہج زہ ہو جا ہم ان یش سے کاذکرکرتے ہیں۔ 1 ارخاوغراونری ے : ۱ ا ایا الائش قں جا مھ مال ون کتگۂ وَأنَلَهَإِلَيْكُم تُور ینا اے لوا بے نک تمہارے اس الش کی رف ےواج دی ل11 لٰ لہ سیرںئسر

۱ ۱ سورۃ الف ا نآ یتر 1

۲ سورۃاٰشمراءآیت93-192 1

سور ارآ ا تنم ر9

" سرۃالدغا نآ یتر 9۳۹ 9 سور الضما مآ تن ر174 ْ

ہے ہے ا٤ء‏ .“۰۹ 1 ہے

۴۱٢۲ ۱۷۰٢۲٢١ 80٥٥ئ‎ 011۱٦٤ ۲٢١ ۸۱٢٥١٢٢٢٢٢ 6ٌا۲]3>‎ ٢۲

777.. ٗ 1 0م,یھ

ٰ 21 لوق رآ نکابیان سے -٭-ےتےے_-×٠ ‏ سک ٹس بت0 0 ...7.077۰0۰002 2_ ارشادباری تھا ے: نول مت الْقرَآِمَا هُوَ شْفَاء وَرَحَة خَدلِلمومِيوی وَلاَيَزیِگ القَّالہٍثیَيلأَحَمَارا ' اورپقر رن یں امارتے ہیں دہز جوا یمان والوں کے لے شفااوررجمت سے اراس سے ظا سچت بڑھتاے۔ آویٹ: :بر ان دک لکیی کچ ہی او ریا اوت رد ہت ہے۔ ۲ا باردگا ہو وا دا کل حُلِلزَِْ آمَنوامُذی وَهِمَاء' یر سرو سو 4 با ھی الگا قَل کَاء تگم مَؤْعِكَڈ قِن ویک ما۶ ما الصْدُور وَعُی وَرَخَةلِليْؤمِيْنْتَ و ا لوا تمہارے اک تمارےر بکیطرف سے مجح تی ے اورولو ںکی امت حدایت ادررجمت ایمان

والوں کے لئے

فو ان کااشتقال

(ازنل) ق رآ نع(افظ) ق رآ کی ط رخ صررے“ قرع قراءۃ وقرآنا اب فتح یفتح ےمصدرح ۲ا جزاردکا

لا رک را کو بی نشیالی سےاورانہوں نے ا لآ یکر بی سے استدلا لکیاہے: ٰ

إي عَليْتَا عنْعَهُوَقُڑا آنَهَفَاذا كَرَأَتَاكفَا تع کُر قَرٴآنَّهُ ' یور روہ خرروسو مور ہہ یں تو اس بڑ ھھ ہوگ ےک اتبا حکرو۔ آناہ“ سے مرادا ںکاقرات ہے اس رائۓ کے مطا یر شقن ہوگا ونس عم مسسیت

ْ تی ے پک تاب الم جہ :. لوٹ: و کسی ڑکا زاس نام ہو وف مراون ہوا سےا لم “کہاجا جاے۔ ٢‏ ا ہنارو

رتو رات ا ورای لک طرح سے (لنی وھ یکنبوں سے نام ہیں شت یں یرت مم شالی رع ال لی .8ہ ہہ ضشسےسہستٹ سے بب نٹب ٹس یٹ شش سکس

ئ! سور الا ۱ء1 بت ت ر82

۱ سورڈفصلتآ یت ر44

:. سور لین ںآ یت م57

سور تالقا ںآ ست مہ 18-17

ےھ ۲٦‏ اء٭* 1

۴۱٢۲ ۱۷۷۰٢۲١٢١ 80٥ئ‎ 011٦٤ ۲٢ ۸۱٢١۷۹٢۲ ۹۲356 ۲

۳۳.7 0,م۸یھ

لوم القرآن ۱ 22 علوس بش رآ ن کا بیان

راۓ ے۔ ٣‏ وٹ :ال کے لے امتاذمائاتطا نک تاب" مبادث ارآ ملا ریت نول ق راغ کی ابترارکب ہل ؟

جب رسول کر لی کی حیاتطی کے چالیس سا لگز رگ ےوسترہرمضا نکونزو لت رآ نا از ہوااں دورا نک

ضور تفلا خذارتراء میں عباد تکر ر سے ت ےک رت جج ربیل ماڈلا حکمت وانے ذکر رآنن ماک )کی آیات ل ےکآ نے اہوں نے| ےآ پکوننے سے لگا یا بی ریچوڑدیا ین م تال اکیاد: ہرم ہک ت” اثراء 5( پڑ حئ بھوررسول اش ایم جواب ارشاد فرماتے”ماانابقاری “یس یٹ سے والاکمیں ہوں مج جے بڑ ہ کی مج ذت نہیں (مول فک رر وضاح تکہ بج بڑ ےکی ' مرف تکیں بی مطل بک ںکہ یھ بڑھ نکی ںآ مک تضور ولفلا کو پڑھ نام ںآ جا چنا نج جب انہوں نے1 پ کر بکاذکرکیاتو آپ نے پڑھناشرد کردا جوا با تگال ہ ےکآ پکور بک طرف ھا گیا سرک مرتہاتہوں ےہا“ اق بآشیم رك الَيِق عَلَق ٥‏ علق نما تَمِن علیہ اقرا أَرَتكَ الأً کور “۲اہزاروری)

اپنے رب کے نام سے میس ہس نے اکسا نکشو نکی چینٹ ے پڑ ے اور پکار ب/حزے۔

اَی عَلم بِالْقْنِ عَلم الَانمَانَ يَمَالَم يَکْلمْ'

جس نیم ےاکھناسکھایا دگ یکو حون جا نما ھا ۱ تورینزدل وی اورٹزول تر نک آناز ھ وف ا اصات لتق اشارے ادرولال جووق کےقرب اودرسول الیم . صلی کے لے نبوت کے تتابت ہو نے پردلاا تمرتے ٹیں دہ ال سے پیل ےآ گے تھے ان دلائل یں سے ہے خحوا بکبھی تھے جونینرکی حالت میں ہوتے تے۔ اودرسول ارم لٹ ای جوخواب د بے ددامیع رح وا ہوتا جس ط رح خیندکی حالت ٹیل د کھت تھے اوران ین ےآ پک لو بد می سیر یرت وی ر بکیاعبادتک۷ر تے تے۔

کی بھاری گی ردایت

رت امام( جھر بن اسا یل )ہار رحمت الڈدنے اپاپ (ہنارگا) شش ”بد ءالوی“ کے باب شیں ایک عد شال کیا ے جوا جا تک رف اورتز ول ق رآ نک یکیفی تک طر ف گی اشاروکر تی ےححضرت امام بای رحمت ال علیہ نے اق سند کےسراتقع رام الم ون ترتع شی و ا نما سےدواحی تکیا آپ نر مالی یں :

بی اکر لی رد یکا آغا زخیندکی حالت یں جچے خوابوں سے ہوا آپ جوقواب د یکتے وو کیا رک کی رح داٹح

۱ سور ٥ن1‏ بت مر 54

ےھ ہے اھ ."۹ 1 ےم

۴۱٢۲ ۱۷۰٢۷٢١ 8ہ0٥ئ‎ 6011۱٦٤ ۲٢ ۸۱٢١٢۹٢۲ ۹۲316 ۲

77 ]ٴ۱[ 0مھ

علوم القرآن 23 ۱ لوم رآ ن کا ان

لس تستٹسٹسستسسسکسسسپچً سس -۔س-۔س۔نئے ےچ ت‌ ہو رآ کے لئ خلوت ( وین کو پہن دک گیا نہ ںآپ ارترای ںتت۰اگی اختیا رق مات او کھ روالو ںکی طرف وائیں نے سے بپ ےک کی را یں (اورون) وہل عباد تک تے اور اپنے ات کھانے پٹ کا ساماانع نے جائتے ر(ام اکموئین) حضرت خر ببیہ ٹٹٹو عنہا کی رف لو ٹآ تے اور ا سک یم لکھانے پیٹ کاسا مان نے جات ےج کراپ کے یا سی آاگیلامی وی کی )اد رآپ نغارتراٹیس تتھےآپ کے الف رشن( حفرت کل م2 ) آے او ری سکیا تپڑ حة" آپ نے رما یاشٹں ڑ جۓ دالاال ہوں-

آپۂر فرماتے ہیں اننہوں نے یھ پک ر نے نے ےلگا انا فک نہوں نے مج سے مت تق ت یں فر مکی بوژ اورکمان یڑ ھے“ یس تن ےکہائیس سنے والایں ہوں انٰہوں نے بھےتسریی مر پلک ر سنہ سے لگا پچ رکموڑر د با او رکہا:

ات رب کے نام سے بڑ سے ہیس نے اکیا انا نکوئم بد ےخوان سے پیا( 1خر یک وگ ر1 بات جلزر گی ہیں )

رہول ارپین دہآیات نے روا یں شرف لاۓ اور پکادل دھڑ کر ھا۔ا

اہ ران السیارک میں نزول ۸ آن کے پارے مںں حرج اوروا نس ابد ی تاب میس سے جب انل عمزت دالی ات ن گر یا: ہے کا توم

قَهُْرژ رَمَضَان النی آنزل ذ یه الَقْرَآنْ عُلّی لِلئَاِ وَبَيْکَاتِ قِن الهُنی َلْفُزگان * ۱ ضا کا ید ٹس رت رآن اتا اوہ ںکیےدایت ادردامئود یہی رشن پا تیں۔

رن پاک لانے والافرشتہحرت چبیل وی تھے یقن پا ککاص ران سے بت ہے ارشاد ار

تھا یے: ۱ . ۱ : تل یو الژو الْأمِتكُ ى عَل فَلْكلِکَکونَ ون الْبْلِرفَبلمان‌عَريافباس'_ اس روح الا ین ن گرا اپ کے ول پت اکم ڈدسنا 2 نع ماف بان شس

درک ریا : ' 5 و] قُل نَّلَهُ رُوخ القنسِں مِن رَيٍكَ بای لِيفَبْتَ الیِثَ آتنوا وَهُلی وَبَمْری 48 1 ا ۲ ٠‏ ۱ کچ ہار جلداول باب لپ بدءالوی َ سورۃالبق رآ یت ر185“ سوچ شعراءآ یت ر93 01“ سورۃافل 1یت102 ۱

ےھ ہے اھ ."۹ 1 ےم

۴۱٢۲ ۱۷۰۲٢۲٢١ 8ہ0٥ئ‎ 011٦٤ ۲٢ ۸۱٢١٢٢۹٢۲ آمٌا3]">‎ ۲

77 ۹ ۱ 0م۸یھ

علم النرآن 4 ۷. علوم قش رآ نکابیاان مخ ما سے اکی رگ کی روم نے اتاراتمہارے ر بک طرف سے ٹیک ٹحیکفکل ہا سے ایمان والو ںکو ۱ شاب ت قد مکرے اورحدرایت اور بشارتمسلمانو لکو_ او روح الائشان یا رو القیل سے مراد ججرننل خلا ہیں اس پ رتا مفسرری نکاانفاقی ہے اورآپ دوگ پرا تال کی طرف سے اشن ہیں اورپ ی ا ماا ود من عظام( شیہم اسلا مم دی کے اتھاتڑے۔

نزول کے اخقپارے بائیا ادرآخ رک آیا تر یم ۱ ات رن پا کک بب سے پیل نازل ہونے والی ”سور علق“ ک یآ بات ہیں ج”اقرا باسم ربك الذای خلق کے ش رو وت ہیں (مہ ار آیات ہیں ) ۱ شر ہچ بفار قکی حد یٹ گز ریگ یٰے۔ ہچ ہمیچ ۱ لوا َؤمآزمَغوت وہل اللہ ثُم وف کل تَفُیں گا تبث وَھُۂ لَىكْلَبُونَ' ارنجیں نہد ا ۳ شر ہوگا۔ چیا اوران قول سے ےتا مل کرام نے اختیارکیا یا اکراما جلالل الد بن سیوٹی یپ نے فرمایا۲: اراس امت کے بپڑے الم تحضر ت مال بن ع اس نا سےبھیا بی منقول ے۔حضرت اما نسای لے ج ا نے معطضرت ظیر ٹڈ سے دای ت اف لکی دو نحضرت اکن عبال ٹٹنا سے دوا یہ کر تے ڈی نپ نے ف رما یا: ْ مرن ما کک سب ےآ تخرمیں نازل ہو ے دا یآ یکر یم وات تقوا یوما ترجعون فيه ا ی الله ؛ے۔ ںآ یت کےنزول کے بعد نی اک رم سای نورا (ظاہرکی زندگی کےساتھ) زندہر ہے پھر الاو لکن تار ْ سوموار کے دا نل کا وص لہ وکیا۔ ْ

سوال:۔

مض حر تککتق ہی ںکرق بآ نکی سب سےآخرشی نازل ہونے ول یآ یت ہے : ۱ ٦‏ الوم أَهَمَلتُ لَگم دِیْنَکگە وَئَْۓ عَلَيْكُم يَعتیؾ وَرَضِيْثُلَکُم الإِشلام

۱ سورة ابق رآ یت 281 : الانتان

ہے ہے ا٤ء‏ .“۰۹ 1 ہے

۴۱٢۲ ۱۷۰٢۷٢١ 80٥ئ‎ 011٦٤ ۲٢ ۸۱٢١٢۹٢۲ آمٌا۹]3‎ ۲

ا7ء "۰أ' ‏ 11۱۱01 0م۸مھ

7 25 ۱ علو مق رآ نکابیان

دی ۱ : رج میس نے تہارے لےتمہارادمی کا لکرد یا اورقم برا یھت ہکا ار دی اورطہارے لئ اسا مکوبطور دن پندگیا۔ ۱ ۱ کراپنے .

.ہے نی نکیوک لآ بت رسول اکر پان پر مج الوداح کےموح رٹ زل ہوگی ےاوراں کے بحدسرککارددعائم ٰ

سیل اک ای( 1) رن زنرەرے او رآپ کےوصال سےنورائمیں سے سور بقرہ آت'واتقوا یوما نازل موی ے (حوال و جرگزر چکاے )لی بج یآ خر نازل ہونے وا ل1ی تکر یہ ےآ یت اویل میا ئا رائے ہے۔

ا7ی تکر بی کے ازل ہوتے بی وق یکا للخ ہوگیا نیس بآ سمان کے مین کے سا حالصا ل کا آخ ریم وتتتھا۔ اور

نول قرآن کے اخام پررسول 1کرم سی رق ایی (اث تال ) کے ساتھ جاٹے اس سے یپ نے اما تو 1 اماخت)اداکردیی اور پیم خداوندی یناد ا اولوگوں کے اتا یٰ کی دی نکی رف راہنما یر ادئا۔

یت مانٴد ہکان ول میں ہتناخرہونا ۱ :

سنا مرو لآ ت (اَ مم ا مل لَککر دی گج ان رک) کے تچ الوداعغ سے مو پرنازگل ہونے کے اگل یس سےک ول وو حد یٹ سے جو ہا مل ردای تک سے نک ایک ود ہححضر تع رفاروق ول کے پا آ او رکننگااےامی الین اتہار کاب میس ایک الییآیت سےکاکردہ ہما رےگردہ فی ود یں پرنازل ہو یلو ہم یں و ںکہعی ئا لیت حر یم فاروق ٹاو نے بو ھا ت کون سیآ یت م راد لے ہے ہوا تن کاڈ تال یکا ی٠‏

طرتگمرفاروق اٹ نے اس سے مایا : : ۱

لی ایس اس کی اوراس دق تکوجا تا ہوں چہال اوزجب بآ یت نازل وکیا یت جع کے دن گصرکے ول وت نازل ہوئی جب رسول اکر سای عرنات میں جےہینی رآ یت اس دن نازل +ولٗ جواسلائیکیرول میں یرت ینعی شی لیس ووعمیرو ںکی عی- ٣‏ ۱ ٰ ُ

سس . ."مممےہ۔۔۔۔۔۔ہ۔ےس9٠٣/بصٹٹ)ٹٹٹ ‏ سش ‏ سل۔ سس یٹ ص۳ ۱ سور ما گر ہآ یتر 3 ۱ 31 سور ما مر ہآ یتہر 3

90 جج بناری اب تفیر

ہے ہے اي 1 جح

۴۱٢۲ ۱۷۷۰٢۲٢١ 8ہ٥ئ‎ 011۱٦٤ ۲٢ ۸۱٣٢١٢٢٢ ۲٢3ا‎ ) ۲

2 و۰ ۲5 ۱ 7 ٌ نیس سر . یک : لو أَتَمَلےُ لگ ذِنْتَگۂ بث عَلَيْکُم یَعُمیؾ وَرَضِییٹ لم الاسشلاھم ۱

77 1 0+ 0مھ

علوم لقن ۱ 26 لو رکا نکابیان ںہ

علامجلال الد بین سیدٹی ایی نے ایت کتاب(الاتان فی علوم القرآن) یش قرآن ا کک بل اور - آشرکی نا زگ ہہونے وال یآ یات سے صملقی بھاشکالات دارد گے اوران کے درست جابات دہے ہم یل می ا نکی خی ذکرکرتے ہیں۔ ٠‏ سے پہلا ا شکال -

یچین( جج باری و سسلم )یش حضرت جابربی نع برادڈ ٹف ٹن لی اکپ سے چو چھاگیاکرسب سے بھی ٹ ران پا ککاکونساحصہ نا ز لک یاگیاانہوں نے فرمایا:

ا اتا اور اے بالا لوس اوڑ نے وا لے

آپ ےاماگیا(ننیں )جہ'افَأباشم رك اليِی حَلُیق'“؛ازل ہول_

اہوں نے را ایی بچھ سے دوبات با نکر باہول جو ہم سے رسول اکر می نے بیان فرمائی۔رسول اکر لے نف مابائ نے نما رراء یس تھائی اختیارکی جب میس نے تمائی) گیمردت )پور یکردک یو می بیشن دادیی می سآ اٹ نے اب آکے جچچے اور دا یں با میں ھا ری نے آسا نکی طرف دبیھاتوحضرت جج مل اڈ موجود تھے مھ مرکی طارکی ہو ٰ گئی۔ یں ححخرت غد یہ نا کے پا سآ یتوم نے ان لگوں( گیل موجو رات ےک ہاتوانہوں نے بج یکل اوڑباد یا ال پرا تھا نے بیآیت